ڪرسمس

کليل ڄاڻ انسائيڪلوپيڊيا، وڪيپيڊيا مان
(ميلاد عيسائي کان چوريل)
ڏانهن ٽپ ڏيو رهنمائي, ڳولا
کرسمس
یوم کرسمس
Nativity tree2011.jpg
پیدائش مسیح کے حوالے سے ایک تخیلاتی منظر، جس میں کرسمس ٹری یا کرسمس درخت بھی دکھایا گیا ہے۔
عرفيت Noël, Nativity, Xmas, Yule
ملهائڻ وارا عیسائی, بہت سے غیر عیسائی بھی[1][2]
قسم عیسائی, کلچر
اهميت پیدائش مسیح کے حوالے سے روایتی تقریبات
رسمون Church services, تحائف دینا, خاندانی اور دوسری سماجی تقریبات, علامتی سجاؤٹ
تاريخ
دورانيو 1 دن
تڪرار سالانہ
منسلڪ Christmastide, Christmas Eve, Advent, Annunciation, Epiphany, Baptism of the Lord, Nativity Fast, Nativity of Christ, Yule


عید ولادت مسیح یا بڑا دِن، جس کو کرسمس بھی کہتے ہیں جو کہ یسوع مسیح (اسلامی نام: عیسی) کی ولادت کا تہوار ہے۔عیسائی دین میں یہ سال کی دو اہم تر عیدوں میں سے دوسرا ہے۔ سب سے اہم تہوار ایسٹر کہلاتا ہے۔ کرسمس عمومی طور پرسالانہ 25 دسمبر کو منایا جاتا ہے۔ تاہم علماء نے تصدیق کی ہے کہ یہ ان کا اصلی یومِ ولادت نہیں ہے۔ ایک تہوار روم میں عیسائیت کے پھیلنے سے پہلے بھی اسی تاریخ کو منایا جاتا تھا۔

پاکستان میں عید ولادت مسیح[سنواريو]

دنیا کے کئ ممالک میں عید ولادت مسیح دھوم دھام سے منائ جاتی ہے۔ اسلامی جمہوری پاکستان میں مسیحی اقلیت یہ تہوار عقیدت سے مناتی ہے۔ اس موقع پر حکومت پنجاب کی جانب سے صوبہ بھر میں تین روز کیلئے کرسمس بازار لگائےجاتے ہیں۔ان بازاروں میں فروخت ہونیوالی اشیاء پر وزیر اعلیٰ پنجاب کی طرف سے خصوصی سبسڈی دی جاتی ہے۔ کرسمس بازار 22 سے 24 دسمبر تک لگائے جاتے ہیں۔صوبہ پنجاب کے سبھی 36 اضلاع کے ڈی سی اوز کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اپنے اپنے اضلاع میں کرسمس کے تہوار پر مسیحی برادری کیلئے ان بازاروں کے انعقاد کیلئے فوری طور پر اقدامات کریں۔[6]

حوالہ جات[سنواريو]